144

موٹر وے ریپ کیس: ملزمان کا چالان تاحال پیش نہ ہوسکا، انعامی رقم تقسیم

سانحہ موٹروے کیس کے مرکزی ملزم عابد ملہی و دیگر کا چالان تاحال پیش نہیں ہوا لیکن اس کے باوجود پنجاب پولیس نے پولیس افسران اور اہلکاروں میں نقد انعامی رقم تقسیم کردی ہے۔آئی جی پنجاب پولیس انعام غنی کے مطابق موٹر وے زیادتی کیس کے مرکزی ملزم نے خود گرفتاری دی۔حکام کے مطابق انعام غنی نے 40 پولیس افسران اور اہلکاروں میں نقد انعامی رقم تقسیم کی۔25 لاکھ روپے سی آئی اے، سی ٹی ڈی اور دیگر شعبوں کے اہلکاروں میں تقسیم کیے گئے۔
انعام غنی کے مطابق موٹروے زیادتی کیس محکمے کے لیے چیلنج تھا، جس میں پیشہ وارانہ مہارت سے سرخرو ہوئے۔
آئی جی پنجاب پولیس کے مطابق موٹروے ریپ کے ملزمان مختصر عرصے میں بہترین ٹیم ورک کی بدولت گرفتار ہوئے اور پنجاب پولیس کی ٹیموں نے جدید ٹیکنالوجی سے ملزمان کی گرفتاری یقینی بنائی۔موٹروے ریپ کیس کا مرکزی ملزم عابد ملہی ایک ماہ تک فرار رہنے کے بعد لاہور کے قریب مانگا منڈی سے گرفتار ہوا تھا ۔عابد ملہی کی گرفتاری کے حوالے سے ان کے والدین کا کہنا تھاکہ اُس نے خود گرفتاری دی جبکہ پولیس کا دعویٰ تھا کہ اُسے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے حراست میں لیا گیا ہے۔
موٹر وے زیادتی کیس میں عابد ملہی کا ساتھی شفقت پہلے ہی پولیس کی حراست میں تھا ،اُس نے جرم کا اعتراف بھی کیا ۔
ملزم عابد کو گرفتاری کےبعد لاہور منتقل کیا گیا ، جہاں متاثرہ خاتون نے اُسے اور شریک ملزم شفقت کو شناخت کرلیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں