84

کراچی چڑیا گھر میں کروڑوں روپے کی کرپشن کا انکشاف

بلدیہ عظمی کراچی کے کراچی زولیجیکل گارڈن میں کروڑوں روپے کی کرپشن کا انکشاف ہوا ہے۔ انٹری فیس میں بھی غیرقانونی اضافی کرکے شہریوں کو لوٹا جارہا ہے۔انٹری فیس سے جمع ہونے والے کروڑوں روپے کراچی زو کے افسران کی جیبوں میں جارہے ہیں ۔ بلدیہ عظمی کراچی کے اکاونٹ میں ایک پائ بھی جمع نہیں ہورہی ہے۔
تفصیلات کے مطابق کراچی میں دو ماہ قبل انٹری فیس کا ٹھیکہ دینے کے لیے ٹینڈر کال کی گئی جس میں کوئ بھی ٹھیکیدار بولی دینے میں کامیاب نہیں ہوا۔ ذرائع کے مطابق کراچی زو کے متعلقہ افسران نے دوبارہ کنٹریکٹ طلب کرنے کے بجائے انٹری فیس نجی طور پر جمع کرنے شروع کردی۔ ذرائع نے بتایا اصولی طور پر ایسی صورحال میں بلدیہ عظمی کراچی کا اسٹاف گیٹ پر تعینات کرکے انٹری فیس وصول کرکے روزانہ کی بنیاد پر بلدیہ عظمی کراچی کے اکائونٹ میں جمع کی جانی چاہیے لیکن یہاں معاملہ اس کے برعکس ہورہا ہے۔ کراچی زو کے متعلقہ افسران کراچی زو کے چار گیٹوں پر اپنے بندے تعینات کرکے فیس وصول کررہے ہیں اور بلدیہ عظمی کراچی کے اکائونٹ میں ایک پیسہ جمع نہیں کرارہے ہیں ۔ذرائع کے مطابق ان افسران نے غیرقانونی طور پر انٹری فیس بھی بڑھادی ہے۔ پہلے انٹری فیس 30روپے تھی جسے بڑھا کر 50روپے کردی گئی ہے۔ اب تک کروڑوں روپے کی آمدنی ہوچکی ہے جو سب افسران کی جیبوں میں جارہے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں