150

کراچی سے تعلق رکھنے کی وجہ سے مجھے سومیل رفتاروالا فاسٹ بالر تسلیم نہیں کیا گیا، محمد سمیع

سماجی رابطے کی ویب سائیٹ پر فاسٹ بالر محمد سمیع نے وزیر اعظم عمران خان اور کرکٹ کميٹی سے مدد کی اپيل کی ہے ، انھوں
نے شکوہ کرتے ہوئے کہا کہ کراچی سے تعلق رکھنے کی وجہ سے مجھے ہمیشہ زیادتی کا نشانہ بنایا گیا، چار اوور میں تین آوٹ کرنے کے بعد مجھے بولنگ ہی نہیں دی گئی۔محمد سمیع نے کہا کہ میں نے دو بار 100 ميل کی رفتار سے انٹرنيشنل کرکٹ ميں گیند کروائی، لیکن مجھے تسلیم نہیں کیا گیا کیوں کہ میرا تعلق کراچی سے تھا، مجھے بتایا گیا اسپیڈ گن خراب ہے ۔ کراچی سے تعللق رکھنے والے فاسٹ بولر نے سوالیہ انداز میں کہا کہ دوسروں کے لیے بولنگ اسپیڈ مشین ٹھيک ہے، ميرے ليے خراب؟
واضح رہے کہ پاکستان کے فاسٹ بالر شعیب اختر جن کا تعلق راولپنڈی سے ہے نے 2003ءورلڈ کپ میں انگلینڈ کے خلاف 161.3 kph (100.2 mph)کی رفتار سے بال کرائی جس پر انھیں دنیا کا تیزتین بالر قرار دیا گیا،بالکل ایسا ہی 2004ءمیں ہوا جب کراچی سے تعلق رکھنے والے فاسٹ بالر محمد سمیع نے انٹرنیشنل ون ڈے میں انڈیا کے خلاف شعیب اختر سے بھی زیادہ فاسٹ بال پھینک دی، محمد سمیع نے162.3 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے بال کرائی۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں