23

پنڈی ٹیسٹ پاکستان کو جنوبی افریقہ پر 200 رنز کی سبقت، چھ کھلاڑی آئوٹ

راوالپنڈی: پاکستان نے پنڈی ٹیسٹ کے تیسرے روز کھیل کے اختتام پر اپنی دوسری اننگ میں 129 رنز بنالیے ہیں جبکہ اس کے چھ بلے باز آئوٹ ہوچکے ہیں، قومی ٹیم کو جنوبی افریقہ کے خلاف مجموعی طور پر 200 رنز کی برتری حاصل ہوچکی ہے۔ میچ کی خاص بات فاسٹ بالر حسن علی کی پانچ وکٹیں ہیں جس نے پاکستان کو سیریز جیتنے کے لیے مضبوط بنیاد فراہم کردی ہےاور پاکستان کو جنوبی افریقی ٹیم کو جلد آؤٹ کرنے پر 71 رنز کی برتری مل چکی ہے لیکن تاحال پاکستانی بلے باز اس کا خاطر خواہ فائدہ نہ اٹھا سکے ہیں۔ پنڈی کرکٹ اسٹیڈیم میں جاری سیریز کے دوسرے اور آخری ٹیسٹ میچ کے تیسرے روز جنوبی افریقہ نے 106 رنز 4 وکٹوں کے نقصان پر اپنی اننگز کا آغاز کیا تو 114 کے مجموعے پر شاہین آفریدی نے کپتان کوئنٹن ڈی کوک کو آؤٹ کیا۔ چھٹی وکٹ پر وین مولڈر اور بواما نے اسکور 164 تک پہنچایا جہاں مولڈر آؤٹ ہوگئے، جس کے بعد پاکستانی بولرز نے مہمان ٹیم کے بلے بازوں کو رک کر کھیلنے کا موقع نہ دیا۔ سوائے ٹیمبا بواما کے کوئی کھلاڑی پاکستانی بولنگ اٹیک کا سامنا نہیں کر پایا اور مہمان ٹیم 201 رنز پر پولین لوٹ گئی۔ پاکستانی فاسٹ بولر حسن نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے جنوبی افریقہ کے 5 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔ پاکستان نے جب اپنی دوسری اننگ کا آغاز کیا تو نوجوان بیٹسمین عمران بٹ صفر پر آئوٹ ٹ ہوگئے، پھر 28 کے مجموعے پر عابد علی بھی پویلین لوٹ گئے، ایسے میں شائقین کی امیدوں کا مرکز بابر اعظم تھے صرف 8 رنز بنا کر کیشو مہاراج کا شکار ہوگئے۔ اظہر علی بھی کوئی بڑا اسکور نہ کرسکے اور 33 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے۔ بعدازاں مرد بحران فواد عالم کریز پر آئے لیکن اس بار وہ اپنی روایتی بیٹنگ نہ دکھاسکے اور صرف 12 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوئے جس کے بعد قومی ٹیم 76 پر ہی آدھی وکٹوں سے محروم ہوگیا۔ ایسے میں فہیم اشرف اور محمد رضوان نے 52 رنز کی پارٹنر شپ بنائی لیکن 128 کے مجموعے پر فہیم اشرف بھی پولین لوٹ گئے۔ دن کے اختتام تک محمد رضوان 28 اور حسن علی بغیر کوئی رن بنائے کیریز پر موجود ہیں۔ جنوبی افریقہ کے جارج لِنڈا نے 3 جبکہ کیشو مہاراج نے 2 اور کگیسو رباڈا نے ایک وکٹ حاصل کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں